مثبت والدین کی مثبت تربیت کیا ہے؟

مثبت والدین کی مثبت تربیت کیا ہے؟

مثبت والدین کی مثبت تربیت کیا ہے؟

تحریر : ڈاکٹرمحمد یونس خالد

بچوں کی مثبت تربیت یہ ہے۔ کہ والدین ان کی جسمانی، ذہنی، جذباتی، دینی واخلاقی اور معاشرتی تربیت کرتے ہوئے ان کی نفسیات کا اس طرح خیال رکھیں۔ کہ کسی ایک پہلوپر توجہ دینے سے زندگی کا دوسرا کوئی پہلو خراب نہ ہو ۔بلکہ بچوں کی زندگی کے تمام پہلو مناسب وقت پر ایک ساتھ بہتری کی طرف گامزن ہوں۔مثبت والدین ہی یہ کام کرسکتے ہیں ۔کہ ان کی تربیت کا ہر پہلو اپنی جگہ پربالکل درست ہو۔اور اگر ان سے کہیں غلطی سرزدہوجائے تو فورا وہ نہ صرف اقرار کرنے میں تاخیرنہیں کرتے بلکہ اس کی اصلاح بھی فورا ہی کردیتے ہیں۔

مثبت والدین کی ایک خاص بات یہ ہوتی ہے۔ کہ وہ اپنے  تربیتی عمل کوپرفیکٹ یا کامل قرار نہیں دیتے۔ بلکہ اپنے آپ کو ذمہ دار سمجھتے ہوئےمزید سیکھنے کا موقع ترک بھی نہیں کرتے ۔ وہ بچوں سے بھی سیکھتے ہیں بڑوں سے بھی سیکھتے ہیں۔ اور تربیت اولاد کے ماہرین سے بھی سیکھتے رہتے ہیں۔ اور جوسیکھتے ہیں اس کو فورا اپنے عمل کا حصہ بنانے کی کوشش کرتے ہیں۔مثبت والدین کی ایک خصوصیت یہ ہوتی ہے۔ کہ وہ اپنی رول ماڈلنگ کو بہتر بنانے کی ہمیشہ کوشش کرتے ہیں۔ان والدین کو یہ معلوم ہوتا ہے کہ اچھی اور مثبت تربیت اچھی رول ماڈلنگ سے ہی ممکن ہے ۔

کیونکہ اس طریقہ تربیت میں بچےاپنے والدین کو دیکھ کر خود سے سیکھنے پر آمادہ ہوتے ہیں۔ جونفسیاتی لحاظ سے بہت اہم ہے۔ جبکہ رول ماڈلنگ کے بغیر صرف دباو ڈال کر بچوں سے کام کروانے کے نتیجے میں وقتی طور پر کام تو نکالا جاسکتا ہے۔ لیکن مستقبل کے لئے یہ طریقہ کار نہ صرف کارآمد نہیں رہتا ۔بلکہ زندگی کی کسی ایک پہلوکی تربیت کسی دوسرے پہلو کی قیمت کی جارہی ہوتی ہے۔جس کا نقصان فائدے سے زیادہ ہوتا ہے ۔ مزیدپڑھیے

تعلیم اور تربیت میں بنیادی فرق
تعلیم اور تربیت میں بنیادی فرق

:مثبت تربیت کی دو اہم خصوصیات

مثبت والدین کی مثبت تربیت کی دوخصوصیات بہت ہی اہم اور بنیادی ہوتی ہیں۔ ان میں سے پہلی خصوصیت یہ ہے کہ ان کی تربیت جامع ہوتی ہے۔ یعنی وہ اپنے بچوں کی تربیت میں محض کسی ایک پہلو کو پیش نظر رکھ کر نہیں کرتے  جس سے تربیت کے دوسرے پہلو نظر انداز ہوجائیں۔  بلکہ زندگی کے تما م پہلووں کو مدنظررکھتے ہوتے تربیت کرتے ہیں۔ جس کا  لازمی نتیجہ یہ ہوتا ہے کہ بچے کی شخصیت اپنے تمام پہلووں کے ساتھ پرورش پاتی ہے۔ جوبڑے ہونے کے بعد اس کی کامیابی اور متوازن شخصیت ہونے کی ضمانت ہوتی ہے۔

اور دوسری خصوصیت یہ ہوتی ہے۔ کہ یہ والدین بچوں کی تربیت کے کسی ایک پہلو پر اس طرح سے فوکس نہیں کرتے۔ کہ جس سے بچے کی زندگی کاکوئی دوسر ا پہلو یا تو بگڑ جائے۔یامتاثر ہوجائےاور سرے سے ہی نظرانداز ہوجائے۔جس کے نتیجے میں بچے کی تربیت ناقص ہو۔ یعنی کسی ایک پہلو کی تربیت کسی حد تک ہوگئی ۔لیکن دوسرے پہلوکے خراب ہونے کے نتیجے میں بچے کی عمومی شخصیت خراب ہوجائے۔اب ظاہر ہے کہ اس طرح کی تربیت کے لئے خود والدین میں توازن کا ہوناضروری ہے ۔اگرخود ان کی شخصیت میں یہ توازن نہ ہو۔ تو بہرحال بچوں کی درست تربیت ممکن نہیں ہوسکے گی ۔ اس لئے ضروری ہے کہ پہلے والدین خوداپنی شخصیت پرتوجہ دیں ۔اس کو بہتر اور متوازن بنائیں۔ اچھی رول ماڈلنگ پیش کریں اورپھر بچوں کی تربیت پر توجہ دیناشروع کریں۔

مزید پڑھیے

Be the first to comment

Leave a Reply