ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کے پوسٹ مارٹم کا عدالتی فیصلہ کالعدم قرار

ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کے پوسٹ مارٹم کا عدالتی فیصلہ کالعدم قرار
کراچی (ویب ڈیسک) ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کا پوسٹ مارٹم کرنے کا فیصلہ کالعدم قرار دیا گیا ،بیٹی کی درخواست پر ایڈیشنل اینڈ ڈسٹرکٹ سیشن جج شرقی نے فیصلہ دے دیا ۔

ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کے پوسٹ مارٹم کا عدالتی فیصلہ کالعدم قرار

کراچی (ویب ڈیسک) ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کا پوسٹ مارٹم کرنے کا فیصلہ کالعدم قرار دیا گیا ،بیٹی کی درخواست پر ایڈیشنل اینڈ ڈسٹرکٹ سیشن جج شرقی نے فیصلہ دے دیا ۔

کراچی کے ایڈیشنل اینڈ ڈسٹرکٹ سیشن عدالت کا بیٹی کی درخواست پر فیصلہ

تفصیلات کے مطابق کراچی کے ایڈیشنل اینڈ ڈسٹرکٹ سیشن جج شرقی نے معروف اینکر ڈاکٹر عامرلیاقت کے پوسٹ مارٹم کے فیصلے کو کالعدم قرار دے دیا، جوڈیشل مجسٹریٹ کے فیصلے کے خلاف مرحوم کی بیٹی دعا عامر کی اپیل پر گزشتہ روز سماعت ہوئی جس کے بعد جوڈیشل مجسٹریٹ شرقی کے پوسٹ مارٹم کے فیصلے کو معطل کر دیا گیا ۔

جوڈیشل مجسٹریٹ شرقی نے 18 جون کو پوسٹ مارٹم کا حکم دیا تھا

واضح رہے کراچی کے ایک شہری نے ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کے پوسٹ مارٹم کے لیے جوڈیشل مجسٹریٹ شرقی کی عدالت میں درخواست دائر کی تھی اور موقف اختیار کیا تھا کہ ڈاکٹرعامر لیاقت ایک پبلک فیگر تھے ان کی موت مشکوک انداز میں ہوئی ہے اس لیے موت کے اسباب کا تعین کرنے کے لئے ان کا پوسٹ مارٹم کرنے کا حکم دیا جائے، جس کے جوڈیشل مجسٹریٹ شرقی نے 18 جون کو عامر لیاقت کا پوسٹ مارٹم کرانے کا حکم دیا تھا۔

دعا عامر نے جوڈیشل مجسٹریٹ کے فیصلے کو چیلنج کیا تھا

عامر لیاقت کے ورثا نے پوسٹ مارٹم کرانے کی مخالفت کی تھی اور ان کی بیٹی دعا عامر نے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کی تھی۔ جس پر آج ایڈیشنل اینڈ ڈسٹرکٹ سیشن جج نے فیصلہ سنایا ۔

ڈاکٹرعامر لیاقت حسین کی موت کے اسباب

Be the first to comment

Leave a Reply