اساتذہ کی وزیر اعلیٰ ہاؤس جانے کی کوشش ، پولیس کی شیلنگ ،لاٹھی چارج

اساتذہ کی وزیر اعلیٰ ہاؤس جانے کی کوشش ، پولیس کی شیلنگ ،لاٹھی چارج
کراچی (ایجو تربیہ ڈیسک) کراچی کے سرکاری اساتذہ کا اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی مظاہرہ ، وزیر اعلیٰ ہاؤس جانے کی کوشش ،پولیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج ، متعدد اساتذہ گرفتار ، کئی زخمی

کراچی (ایجو تربیہ ڈیسک) کراچی کے سرکاری اساتذہ کا اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی مظاہرہ ، وزیر اعلیٰ ہاؤس جانے کی کوشش ،پولیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج ، متعدد اساتذہ گرفتار ، کئی زخمی

اساتذہ اپنی مستقلی کے لئے احتجاجی مظاہرہ کر رہے تھے

تفصیلات کے مطابق کراچی کے پرائمری اسکولوں سے تعلق رکھنے والے اساتذہ نے پیر کے روز اپنے مطالبات کے حق میں دوبارہ سڑکوں پر آئے، احتجاج کرنے والے اساتذہ میں مرد اور خواتین دونوں شامل تھے ، اساتذہ نے اپنے مطالبات کے حق میں وزیر اعلیٰ ہاؤس کی طرف مارچ کیا جس کو روکنے کے لئے پولیس نے شیلنگ اور لاٹھی چارج کی۔

پولیس کارروائی سے متعدد اساتذہ زخمی ، کئی گرفتار

مظاہرین کو منتشر کرنے کی کوشش کے دوران متعدد اساتذہ زخمی ہوگئے ، کئی اساتذہ پولیس کے ہاتھوں گرفتار ہوئے ۔ اساتذہ کے مظاہرے کے دوران وزیر اعلیٰ ہاؤس کے اطراف سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے ۔

کنٹریکٹ اساتذہ کا مطالبہ ہے انہیں مستقل کیا جائے

اساتذہ کا مطالبہ ہے کہ انہیں مستقل کیا جائے ، یہ اساتذہ اپنے اس مطالبے کے حق میں گزشتہ ہفتے کراچی پریس کلب پر بھی مظاہرہ کر چکے ہیں ،پریس کلب پر ہونے والے مظاہرے کے دوران بھی پولیس نے مظاہرین پر شیلنگ کی تھی اور کئی اساتذہ کو گرفتار بھی کیا تھا ۔

احتجاج ہمارا آئینی حق ہے ،گورنمنٹ اسکول ٹیچر ایسوسی ایشن کا ردعمل

گورنمنٹ اسکول ٹیچر ایسوسی ایشن نے پولیس کی جانب سے اساتذہ پر تشدد کے حالیہ واقعے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور مطالبہ کیا ہے کہ تشدد کے ذمے داروں کے خلاف کارروائی کی جائے ۔ گسٹا کے صدر اشرف خاصخیلی نے اپنے ردعمل عمل میں کہا ہے کہ اپنے مطالبات کے حق میں مظاہرہ کرنا اساتذہ کا آئینی حق ہے پولیس کے تشدد کی وجہ سے ہم اپنے اس حق سے دست بردار نہیں ہوں گے ۔ انہوں نے سندھ حکومت سے مطالبہ کیا کہ کنٹریکٹ اساتذہ کو فوری مستقل کیا جائے ۔

پنجاب کے اسکولوں انٹرن شپ پر اساتذہ بھرتی کرنے کا فیصلہ

Be the first to comment

Leave a Reply