پبلک ٹرانسپورٹ کرایوں میں 20فیصد اضافہ، ٹرانسپورٹرز نے ہڑتال کی اپیل کردی

public transport fare

کراچی (نیوز ڈیسک)پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں حالیہ اضافے کے بعد انٹر سٹی پبلک ٹرانسپورٹ کے کرایوں میں 20 اضافہ کردیا گیا ہے دوسری طرف رکشے اور آن لائن ٹیکسیوں نے بھی منہ مانگا کرایہ وصول کرنا شروع کر دیا ہے

کراچی سمیت ملک کے مختلف شہروں میں ایک اسٹاپ کا کم از کم کرایہ 20 روپے وصول کیا جا رہا ہے جو اس سے قبل دس روپے تھا جبکہ بسوں کا زیادہ سے زیادہ کرایہ 70 روپے سے تجاوز کر چکا ہے جو پہلے 50 سے 60 روپے کے درمیان تھا جبکہ رکشے میں کچھ فاصلے پر بھی ڈیڑھ سو روپے کرایا وصول کیا جارہا ہے رکشہ ڈرائیوروں کا کہنا  ہےکہ پیٹرول کی قیمت  بڑھنے کے باعث سواری میں بہت کمی واقع ہوئی ہے اور مسافر پرانے کرائے پر ہی اصرار کررہے ہیں ایسے میں ہمارا کام ٹھپ ہونے کا خدشہ ہے

دوسری جانب انٹر سٹی چلنے والی بسوں ،کوسٹرز اور دیگر گاڑیوں نے بھی اپنے کرایوں میں مزید 20فیصد اضافہ کر دیا ہے جس کے نتیجے میں دو ہفتے کے اندر انٹر سٹی ٹرانسپورٹ کے کرایوں میں مجموعی طور پر 40فیصد اضافہ ہوگیا ہے، جس کے باعث غریب مسافر شدید پریشانی کا شکار ہیں دوسری طرف گڈزٹرانسپورٹرز بھی اپنے کرایوں میں 30 فیصد تک اضافہ کر دیا ہے

دریں اثنا سپریم کونسل آف آل پاکستان ٹرانسپورٹرز نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں حالیہ اضافے کے خلاف ہڑتال کی اپیل کردی ہے اور کہا ہے کہ ٹرانسپورٹرز حکومت کے ظالمانہ فیصلے کے خلاف موثر احتجاج کریں تاکہ حکومت اپنے فیصلے پر نظر ثانی پر مجبور ہو جائے

Be the first to comment

Leave a Reply